PDA

View Full Version : کبھی تو مُحِیطِ حواس تھا سو نہیں رہا


AfTaB AnSaRi
12-20-2011, 12:57 AM
[Only Registered Users Can See Links]
کبھی تو مُحِیطِ حواس تھا سو نہیں رہا
کبھی تو مُحِیطِ حواس تھا سو نہیں رہا
میں ترے بغیر اُداس تھا سو نہیں رہا

مِری وسعتوں کی ہوس کا خانہ خراب ہو
مِرا گاؤں شہر کے پاس تھا سو نہیں رہا

تری دسترس میں تھیں بخششیں سو نہیں رہیں
مِرے لَب پہ حرفِ سپاس تھا سو نہیں رہا

میرا عکس مجھ سے اُلجھ پڑا تو گِرہ کھلی
کبھی میں بھی چہرہ شناس تھا سو نہیں رہا

مرے بعد نوحہ بہ لَب ہوائیں کہا کریں
وہ جو اِک درِیدہ لباس تھا سو نہیں رہا

میں شکستہ دِل ہوں صف ِ عدُو کی شکست پر
وہ جو لُطفِ خوف و ہراس تھا سو نہیں رہا

محسن نقوی

Princess Of Azkaban
12-20-2011, 04:14 PM
میں شکستہ دِل ہوں صف ِ عدُو کی شکست پر
وہ جو لُطفِ خوف و ہراس تھا‘ سو نہیں رہا

محسن نقوی

kia baat hay.

Black Pearl
01-22-2012, 02:50 AM
BoHat kHoob

Good work

Thanks

Rania
09-27-2012, 05:27 PM
Buhat he zabardst

tahirahussain8
09-28-2012, 09:39 AM
nice sharing

Night Jasmine
09-29-2012, 02:07 AM
میرا عکس مجھ سے اُلجھ پڑا تو گِرہ کھلی‘
کبھی میں بھی چہرہ شناس تھا‘ سو نہیں رہا
awesome!!

Cute Fairy
01-06-2013, 08:18 PM
thanks for sharing